شفیق مراد بھی مزہبِ احمدیت کو چھوڑ گئے

شریف جیولرز آف ربوہ کے مالک شریف سُنار کے منجھلے بیٹے شفیق مُراد نے ۲۶ اگست ۲۰۱۲؁ بروز اتوار کو بمقام ادارہ منہاج القرآن، فرینکفرٹ(جرمنی) میں دو سو سے زائد لوگوں کی موجودگی میں “”ترک قادیانیت”” کا اعلان کیا۔
شفیق مُراد جرمنی اور دیگر ممالک میں اُردو ادب کے حوالے سے ایک جانی پہچانی شخصیت ہیں اور جرمنی میں “احمدی آرگ” سائٹ کو متعارف کرانے میں جہاں جنا

ب حیدر قریشی(شاعر) جو احمدیہ گزٹ کے بہت عرصہ ایڈیٹر رہے ہیں، اُنکی محنت قابل ستائش ہے وہاں شفیق مُراد کی خدمات کو بھی ایک مقام حاصل ہے۔ حیدر قریشی احمدیت کے ظالمانہ نظام کا مقابلہ نہ کرسکے اور مرزا مسرور احمد کے خلیفہ بنتے ہی معافی نامہ لکھ کر واپس مذہب احمدیت میں چلے گئے، مگر شفیق مُراد مسلسل مذہب احمدیت سے سوال و جواب کرتے رہے اور آخر کار چند روز قبل مذہب احمدیت کو الوداع کہہ دیا۔ شفیق مُراد مرزا لقمان کی سابقہ بیوی “فائزہ”( مرزا طاہر احمد چوتھے خلیفہ) کی بیٹی کے موجودہ خاوند میاں حنیف عُرف ببو کے بڑے بھائی ہیں۔
اے کے شیخ صاحب سے بات کرتے ہوئے شفیق نے بتایا کہ جیسے ہی مذہب احمدیت کی قیادت اور اُنکے اپنے خاندان کو اس اعلان کا علم ہوگا وہ اُنپر بہت سختی سے پیش آئیں گےدُعا کریں کہ وہ ثابت قدم رہیں اور وہ ہر ظُلم اور دُکھ کو خندہ پیشانی سے برداشت کر سکیں۔

جناب عبدالباسط سماٹری کی وفات

تمام دوستوں کو انتہائی دکھ اور افسوس کے ساتھ یہ اطلاع دی جاتی ہے کہ ہمارے ایک مجاہد جناب عبدالباسط سماٹری جو مذہب احمدیت کی حقیقت کو بے نقاب کرنے میں دن رات کوشاں تھے آج دن گیارہ بجے جرمنی میں وفات پاگئے، إِنَّا لِلَّـهِ وَإِنَّا إِلَيْهِ رَاجِعُونَ۔ اللہ تعالی اُن کے لواحقین کو صبردے اور اُنہیں غریق رحمت کرے، آمین۔
باسط سماٹری مذہب احمدیت کے مبلغ صادق سماٹری کے بیٹے تھے اور انٹرنیٹ کے دوست ایک مذہب احمدیت کی ایسی شخصیت جو ہمیشہ مغلظات بکتی ہے دین محمد شاہد المعروف “”بلوچ”” کے ہم زلف تھے، فیصل آباد کے معروف شیخ لیئق احمد آف سپئیر پارٹس ڈیلر کے بھانجے تھے۔
باسط سماٹری کا سب سے اہم کارنامہ “”اندر کی باتیں”” جس کا دوسرا نام “”مرزاغلام احمد قادیانی اپنی تحریروں کے آئینے میں”” کتاب ہے۔ جو انٹرنیٹ پر موجود ہے۔
ہماری ویب سائٹ احمدی آرگ www.ahmedi.org کی پوری ٹیم اور فیس بک کے معاون عبدالباسط سناٹری صاحب کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کرتے ہیں اور آپ کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ اللہ مرحوم کے درجات بُلند کرے۔ آمین

English Website