Home / احمدیہ جماعت / جماعت احمدیہ کا نظام ناکام، اور فالتو دھمکیاں

جماعت احمدیہ کا نظام ناکام، اور فالتو دھمکیاں

یہ خط برطانیہ کے جماعت احمدیہ کے اخبار میں شائع ہوا۔ اصل یہان ملاحظہ کیجیے۔

پیارے بھائی،

 

میری دعا ہے کہ یہ پیغام آپ کو اچھی صحت اور اللہ کی حفاظت میں پائے۔
جیسا کہ جماعت کے کئی ممبران جانتے ہیں، جماعت کے دشمنوں کی طرف سے ایک مہم جاری ہے جس میں ہمارے پیارے حضور اور جماعت کے افراد کو طعن و تشنیع کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

 

آپ کے مکروہ اور ظالم نظام اور احمقانہ عقائد پر تنقید ہے۔

 

 

یہ گزشتہ چند سال سے جاری ہے، مگر حال میں اِن کی کارروائیوں نے ایک خاص نحوست اور  انتقامانہ رُخ اختیار کر لیا ہے۔ ان افراد کے گروہ نےغیر قانونی طور پر  صیغہ راز میں رکھی جانے والی جماعتی اور ذاتی املاک کی چوری کی ہے۔ اور ان کے ذریعہ سے یہ گندی کارروائیاں کی ہیں۔
کیا آپ نے پچھلے سال مسلمانوں پر قتل کا الزام نہیں لگایا تھا؟ جو آپ کو الٹا پڑا؟ ہم تو صرف حق نمائی کر رہے ہیں۔

 

اس میں جماعت کے بہت سارے افراد کی برقی ڈاک [ای میل] کے پتوں کی چوری ہے۔ انہوں نے ان پتوں کے ذریعہ سے جماعت اور چند جماعت کے افراد کے خلاف پیغامات بھیجے ہیں۔ اُنہوں نے جماعت کی دستاویزات اور چند افراد اور ان کے خاندانوں  کی ذاتی چیزیں بھی حاصل ہیں۔

 

ای میل اور چیزوں کی چوری؟  چوری ہے تو پولیس رپورٹ دکھائیں ورنہ لوگوں کو دھوکہ نہ دیں۔

 

افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ صاف ظاہر ہے کہ ہماری جماعت کے بعض ممبران یا تو جان کر اور یا بھولے سے اُس امانت میں خیانت کر رہے ہیں جو ان کو سونپی گئی ہے۔ اور معلومات کو ظاہر کر رہے ہیں اور باہر نکال رہے ہیں۔

 

وہ آپ کے ظالمانہ نظام کے خلاف آواز اٹھا رہے ہیں۔

 

یہ حملہ ۔ ہماری جماعت، مسیح موعود اور اس کے خلفاء پر حملہ سے کم نہیں۔ جن لوگوں نے یہ گھناؤنے کام کیے ہیں، ان کا کھلاعزم جماعت کی تباہی ہے۔

 

آپ کے لوگ معلومات دے رہیں ہیں یا حملہ کر رہے ہیں؟ فیصلہ کیجیے۔ اور اگر وہ ظلم کے خلاف آواز اٹھا رہے ہیں تو واقعی ظالموں پر حملہ ہے۔

 

 

دوسری طرف، یہ واضح ہے کہ یہ حملے مسیح موعود کی سچائی کا نشان ہیں اور جماعت کے دشمنوں کی مکمل شکست ہے۔  وہ مسیح موعود کی تعلیمات اور فلسفہ پر حملہ نہیں کر سکتے اس لیے اُن کے پاس صرف یہ رہ جاتا ہے کہ وہ ہمارے پیارے حضور اور جماعت کے ممبران کی اس طرح سے ہتکِ عزت کریں، جھوٹے اور گمراہ کرنے والی معلومات کے ساتھ۔

 

جناب کبھی مباحثہ تو کیجئے، یا ایم ٹی اے پر دکھائیے۔ یا ہمارے چینل پر مباحثہ کا انجام دیکھ لیجئے۔

 

یہ مومنوں کی مخالفت کا ایک حصہ ہے۔ ہمارے  بہن بھائی جو انڈونیشیا میں اور پاکستان میں ہیں، اور دیگر ممالک میں جو اپنی جان کی قربانی دے رہے ہیں: اب ہماری عزت پر حملے ہو رہے ہیں۔ بہر حال ہمارا فرض ہے کہ ہم اصلی اسلام کی ترقی اور پھیلاؤ کی حفاظت کریں۔

 

اگر سچ ہے تو عزت پر حملہ کیسا؟

 

اس لیے ضروری ہے کہ میں آپ کو بتاؤں کہ جماعت اس حملہ کے بارے میں کیا کر رہی ہے اور آپ اپنا حصہ کیسے نبھا سکتے ہیں۔

 

اس سے پہلے کہ میں بتاؤں، میں چاہتا ہوں کہ ایسے لوگوں کو ایک موقعہ دوں جو انجانے میں اس حرکت میں ملوث ہیں یا وہ جن کو اس کے بارے میں کچھ علم ہے۔  یہ وقت ہے کہ رازدارانہ طور پر آگے بڑھیں اور اگر مجھ سے بات کرنا چاہیں یا ملنا چاہیں تو مجھ سے کسی بھی وقت رابطہ کر سکتے ہیں۔

 

یار، آپ کر کیا سکتے ہیں۔ اپنے جرائم چھپا لیں تو بہت ہے۔ یہ جان کر لوگوں کو دھمکانا جب کہ کوئی قانونی جواز نہیں ہے۔ یہی آپ کے ظلم کا ثبوت ہے۔ یہ کوئی ملکی قانون سے محفوظ کیا ہؤا مواد نہیں۔ دھوکہ سے آپ باز نہیں آتے۔

 

ہم متعلقہ قانونی اداروں کے ساتھ کام کر رہے ہیں، تا کہ جن لوگوں نے چوری کیا ہوا مواد حاصل کیا ہے کہ یا کسی بھی طرح اس مواد کو آگے پہنچایا ہے، ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے۔ ہمارے وکیل ان کے خلاف دیوانی کارروائی بھی کر رہے ہیں۔ جماعت کی  تمام اندرونی معلومات کی حفاظت بھی سخت کی جائے گی اور دیگر اقدامات بھی کیے جائیں گے۔

 

پھر وہی گیدڑ بھبکیاں۔  نجی اداروں کے مواد کے خلاف کوئی قانون نہیں ہے۔ سمجھے؟

 

وقتاً فوقتاً ہم جماعت کے ممبران کو  کسی بھی رخنہ کی اطلاع دیتے رہیں گے اور یہ بھی بتائیں گے کہ جماعت کیا اقدام اٹھا رہی ہے۔  دریں اثناء، تمام ممبران سے گزارش ہے کہ مندرجہ ذیل اقدام کریں:
کسی بھی ای میل کے ساتھ منسلک فائل نہ کھولیں۔ ہو سکتا ہے ان میں وائرس ہو جو کہ آپ کے کمپیوٹر پر حملہ کرے اور آپ کے کمپیوٹر سے معلومات چوری کر لے۔

 

اچھا جی؟ تو پھر ہم آپ کے جماعتی اطلاعات کیسے وصول کریں؟ اور اپنا کام کیسے کریں۔ ذرا سوچ کر بات کرتے تو اچھا ہوتا؟

 

جن ویب سائٹ پر یہ گندے پیغامات ہیں ان پر نہ جائیں۔

 

کیا ان سے کمپیوٹر خراب ہوتا ہے؟ کہ ذھن روشن ہوتا ہے۔ ڈراتے ہوئے وضاحت کر دیتے تو اچھا تھا۔  نئی نسل آپ کے قابو سے باہر ہے، اور وہ انٹرنیٹ کو آپ سے اچھی طرح جانتے ہیں۔

 

یہ بھی مناسب ہو گا کہ جماعت کے ممبران اپنا دینی علم بڑھائیں تا کہ ان حملوں کے معقول جواب دے سکیں۔

 

جب ویب سائٹ پر ہی نہیں جائیں گے، تو جواب کیسے دیں گے؟ واہ ، واقعی جھوٹ کی کوئی ٹانگ نہیں ہوتی۔

 

تسلی کریں کہ جن کمپیوٹر اور فون سے آپ ای میل دیکھ رہے ہیں ان پر وائرس اور فالتو ای میل کے بچاؤ کا مناسب انتظام ہے۔ اگر آپ کو خدشہ ہے کہ آپ کی ای میل تک کسی نے رسائی حاصل کر لی ہے تو برائے مہر بانی مجھ سے رابطہ کریں۔

 

تو جناب امیر صاحب اب تکنیکی مدد بھی دیں گے۔ یہ کیوں نہیں کرتے کہ ظلم اور استحصال والے پیغامات نہ بھیجیں۔ چھوڑ دیں یہ ظلم کا دھندا۔

 

سب سے بڑھ کر دعا کریں کہ اللہ حق کو باطل سے ممتاز کر دے۔

 

ہو چکا جناب۔

 

آخر  میں میں آپ کو اللہ تعالی کے ان الفاظ سے اجازت چاہوں گا: سورۃ البقرۃ۔  کہ اللہ ہمیں معاف کرے اور ہمیشہ ہم پر رہم کرے۔ آمین۔

 

ثم آمین۔ اور ہدایت بھی دے۔

 

والسلام،
رفیق احمد حیات، امیر برطانیہ

About چودھری اکبر

Check Also

نسیم مہدی کا قصہ، کہانی اور جوابات

یہ تھا وہ خط جو قادیانی احمدیہ کی کینیڈا کی شاخ کے سربراہ ملک لال …

English Website